21

*جھنگ(جاوید اعوان سے)محکمہ صحت جھنگ میں اکاؤنٹس برانچ کے گٹھ جوڑ سے ڈرگ ایکٹ رولز کی خلاف ورزی عروج پر….ڈی فیسنگ کے بغیر میڈیسن و دیگر ضروری سامان کی لوکل سٹورز و سرکاری محکموں میں پرچیز جاری بیشمار بلز مافیاز کے سپرد*

*جھنگ(جاوید اعوان سے)محکمہ صحت جھنگ میں اکاؤنٹس برانچ کے گٹھ جوڑ سے ڈرگ ایکٹ رولز کی خلاف ورزی عروج پر….ڈی فیسنگ کے بغیر میڈیسن و دیگر ضروری سامان کی لوکل سٹورز و سرکاری محکموں میں پرچیز جاری بیشمار بلز مافیاز کے سپرد*
*محکمہ صحت جھنگ میں اکاؤنٹس برانچ کے گٹھ جوڑ سے ڈرگ ایکٹ رولز کی خلاف ورزی عروج پر*
*ڈی فیسنگ کے بغیر میڈیسن و دیگر ضروری سامان کی لوکل سٹورز و سرکاری محکموں میں پرچیز جاری بیشمار بلز مافیاز کے سپرد* تفصیلات کے مطابق
_ڈرگ ایکٹ رولز کی خلاف ورزی سے ضلع بھر میں بغیر لائسنس کے میڈیکل سٹورز قائم_
محکمہ صحت جھنگ میں ڈرگ ایکٹ رولز کی ضلع بھر کی تحصیلوں میں عروج پر بغیر رجسٹرڈ،بغیر لائسنس میڈیکل سٹورز کی موجودگی کیساتھ ساتھ سرکاری ہسپتالوں میں ضلع بھر کی مختلف فارمیسیز اور وارڈز میں ادویات کی ڈی فیسنگ کے بغیر سپلائی جاری محکمہ ہیلتھ جھنگ کے اعلیٰ افسران مافیاز کے ساتھ ملی بھگت کے ذریعے سرکاری خزانے کو من مرضی سے نقصان پہنچانے میں مگن تفصیلات کیمطابق کمائی کے نئے نئے انداز،کالے کارنامے ھوئے بے نقاب سینئر ڈرگ انسپکٹر، پرچیز آف میڈیسن، سرجیکل فارماسسٹ، سٹور کیپرز بی ایچ یوز و آر ایچ سیز سمیت ضلع بھر میں ہسپتالوں کی ٹراما فارمیسی،آپریشن تھیٹر فارمیسی اور وارڈز میں ادویات کی ڈی فیسنگ کے بغیر سپلائی جاری ھے جو کہ ڈرگ ایکٹ رولز کی خلاف ورزی ھے ذرائع کا کہنا ھے کہ یہ مافیاز میڈیسن،سرجیکل کمپنیوں سے مک مکا کرتے ہوئے ڈی فیسنگ کی پیمنٹ وصول کرتے ہیں اور تمام مافیاز آپس میں بندر بانٹ کرلیتے ہیں جو کہ ڈرگ ایکٹ رولز کیمطابق قانوناً جرم ھے مافیاز کیخلاف بیشمار رپورٹس و انکوائریوں کے باوجود تمام کرپٹ اہلکار اپنے سابقہ عہدوں پر براجمان ہیں کرپٹ مافیا کی ٹیم کے بااثر ہونے کے باعث صوبائی وزیر ہیلتھ پنجاب،سیکرٹری ہیلتھ پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ کیئر ڈیپارٹمنٹ پنجاب کی خاموشی معنی خیز ھے۔
عوامی و سماجی حلقوں نے وزیر اعلی پنجاب مریم نواز شریف سے محکمہ صحت جھنگ میں کرپٹ عناصر کلرک،سپرنٹنڈنٹ،اکاؤنٹ آفیسرز و دیگر ملوث اہلکاران کو سابقہ ڈپٹی کمشنرز سمیت محکمانہ رپورٹس کی رو سے فی الفور ضلع بدر کرنے کا مطالبہ کرتے ھوئے کرپٹ مافیاز کیخلاف محکمانہ و شہریوں کیجانب سے دائر کی گئی درخواستوں،کیسز کو ری اوپن کرکے اعلیٰ سطح کمیٹی تشکیل دینے کا مطالبہ کر دیا تاکہ خزانہ سرکار کو مزید ناقابل تلافی نقصان سے بچایا جاسکے اور مافیا کیجانب سے دن بدن بڑھتے ہوئے سنگین مسائل سے محفوظ رہ سکے۔۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں