23

جھنگ ۔ گورنمنٹ کی پالیسی پر نہ اترنے والے پرائیویٹ کالجز و سکولوں کی بھرمار ۔ نہ بچوں کے لیے کھیل کے گراؤنڈز سمیت سہولیات کا فقدان ۔ نہ بجلی کے متبادل انتظامات ۔ پارکنگ کی جگہ نہ ہونے پر سڑکوں اور گلیوں پر قابض سکول انتظامیہ کے خلاف سخت کارروائی کا مطالبہ ۔ عوامی وسماجی حلقے۔

جھنگ ۔ گورنمنٹ کی پالیسی پر نہ اترنے والے پرائیویٹ کالجز و سکولوں کی بھرمار ۔ نہ بچوں کے لیے کھیل کے گراؤنڈز سمیت سہولیات کا فقدان ۔ نہ بجلی کے متبادل انتظامات ۔ پارکنگ کی جگہ نہ ہونے پر سڑکوں اور گلیوں پر قابض سکول انتظامیہ کے خلاف سخت کارروائی کا مطالبہ ۔ عوامی وسماجی حلقے۔
جھنگ (محمد جاوید اعوان)ضلع بھر میں غیر قانونی طور پر قائم سکول و کالجز ضلعی انتظامیہ کی کرپشن بدعنوانیاں بےضابطگیاں کا منہ بولتا ثبوت ہے ۔ حکومت کی جانب سے لاگو پالیسی پر پورا نہ اترنے والے پرائیویٹ کالجز و سکول انتظامیہ نہ صرف ہزاروں روپے فیسوں کی مد میں لوٹ رہے ہیں بلکہ آئے روز مختلف فنگشن منعقد کر کے بچوں سے ہر چوتھے دن مختلف فنڈز کی مد میں کروڑوں روپے دھوکہ دہی فراڈ کرکے لوٹ کھسوٹ کرتے رہتے ہیں ۔ جبکہ ان ٹرینڈ ناتجربہ کار اناڑی سٹاف بھرتی کر کے فقط خانہ پری کرکے سادہ لوح شہریوں کی جیبوں پر ڈاکےڈالنے کاسلسلہ شروع کر رکھا ہے ۔ میڈیا سروے کے دوران مختلف کالجز اور سکولوں میں سٹوڈنٹس کے سائیکل ۔ موٹر سائیکل پارکنگ کے لیے کوئی جگہ موجود نہیں ہے ۔ سکول کے بچوں کو تفریح کا ماحول فراہم کرنے کے لیے کھیل کے گراؤنڈز سمیت دیگر سہولیات کا فقدان ہے ۔ مقام افسوس یہ ہے کہ یہ پڑھا لکھا طبقہ شہریوں کے لیے وبال جان بن گیا ہے ۔سکولوں کے باہر مین سڑکوں پر غیر قانونی سائیکل سٹینڈز قائم کیے گئے ہیں تو گلیوں بازاروں پر بھی قبضہ کر کے راہگیروں کے راستے بند کر رکھے ہیں۔ شہر بھر کے داخلی و خارجی اہم ترین روڈز سکولوں کی چھٹی کے وقت مکمل طور پر بند دکھائی دیتے ہیں جس کے باعث کئی کئی گھنٹے ٹریفک جام رہنا معمول بن چکا ہے شہری ذلیل وخوار ہونے کے علاؤہ کئی کئی گھنٹے ایمبولینسز کوکتی رہتی ہیں ۔ محکمہ تعلیم کے اعلیٰ افسران لین دین کر کے اس پیشہ ور مافیا کی کھلے عام سرپرستی کرنے میں مصروف دکھائی دیتے ہیں ۔ محکمہ تعلیم کے اعلیٰ ضلعی افسران اور یہ پرائیویٹ کالجز اور سکول مافیا نے لوٹ مچائی ہے اور یہ مافیا ٹریفک نظام کے ہر وقت مفلوج رہنے کا باعث بن چکے ہیں ۔ جس پر عوامی وسماجی کاروباری وکلاء اور صحافتی تنظیموں نے وزیر اعلیٰ پنجاب ۔ چیف سیکرٹری پنجاب سمیت دیگر اعلیٰ حکام سے فوری نوٹس لینے کا پرزور مطالبہ کیا ھے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں