19

جھنگ (محمد جاوید اعوان)جھنگ کے محکمہ ریونیو کی تین تحصیلوں میں چھ ماہ سے تحصیلدار تعینات نہ کئے جا سکے۔جھنگ کا ایک ہی تحصیلدار ہونے سے سائلین کو رجسٹری کروانے میں شدیدمشکلات درپیش، چار تحصیلوں کا چارج ہونے پر کرپشن میں بے پناہ اضافہ ہو گیا

جھنگ (محمد جاوید اعوان)جھنگ کے محکمہ ریونیو کی تین تحصیلوں میں چھ ماہ سے تحصیلدار تعینات نہ کئے جا سکے۔جھنگ کا ایک ہی تحصیلدار ہونے سے سائلین کو رجسٹری کروانے میں شدیدمشکلات درپیش، چار تحصیلوں کا چارج ہونے پر کرپشن میں بے پناہ اضافہ ہو گیا۔ذرائع کے مطابق چھ ماہ سے جھنگ تین تحصیلوں شورکوٹ،اٹھارہ ہزاری اور احمد پور سیال میں تحصیلدار جیسی اہم آسامیاں خالی پڑی ہیں جس کی وجہ سے تحصیل جھنگ تحصیلدار محسن پڑھیار کو تینوں تحصیلوں کا اضافی چارج دے دیا گیا ہے جس سے لوگوں کو رجسٹری کروانے میں مشکلات کا سامناکرنا پڑ رہا ہے دور دراز سے آنے والے سائلین کے ساتھ عورتیں اور بچے ہونے ہیں اور وہ رجسٹری کی غرض سے تحصیل آفس آتے ہیں لیکن تحصیلدر آفس میں موجود نہیں ہوتے کیونکہ وہ کسی دوسری تحصیل میں مجود ہوتے ہیں جس کی وجہ سے سائلین کو وقت کے ضیاع کے ساتھ ساتھ مالی نقصان بھی اٹھانہ پڑتا ہے۔ دوسری جانب تحصیلدار کے پاس چار تحصیلوں کا چارج ہونے سے کرپشن میں بھی بے پناہ اضافہ ہونے لگا ہے چاروں تحصیلوں میں رجسٹری کے لئے ایک فیصد کمیشن فیس لازمی قرار دے دی گئی ہے۔تحصیلدار اور اس کے من چاہے عملہ نے کرپشن کا بازار گرم کر رکھا ہے۔ضلع بھر سے محکمہ مال سے متعلق کام کے سلسلے میں آ نے والے سائلین نے حکام سے فی الفور تینوں تحصیلوں میں تحصیلدار تعینات کرنے اور کرپشن میں ملوث تحصیلدار اور اس کے حواریوں کے خلاف شفاف انکوائری کرانے کے ساتھ ساتھ سخت محکمانہ کاروائی عمل میں لانے کا مطالبہ کیا ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں