19

جھنگ ۔غیر رجسٹرڈ پرائیویٹ کالجز و سکولوں کے خلاف گرینڈ آپریشن وقت کی اہم ضرورت ۔ ٹیکس چوری کی مد میں خزانہ سرکار کو کروڑوں روپے کا چونا ۔ بھاری نذرانے وصول کر کے متعلقہ افسران کے فرضی آڈٹ کاغذوں کی حدتک محدود جبکہ درجنوں بھر پرائیویٹ سکول و کالجز محکمہ کی پالیسی کے مطابق پورا اترنے سے قاصر ۔ ذرائع ۔ اعلیٰ حکام نوٹس لیں شہریوں کی اپیل ۔

جھنگ ۔غیر رجسٹرڈ پرائیویٹ کالجز و سکولوں کے خلاف گرینڈ آپریشن وقت کی اہم ضرورت ۔ ٹیکس چوری کی مد میں خزانہ سرکار کو کروڑوں روپے کا چونا ۔ بھاری نذرانے وصول کر کے متعلقہ افسران کے فرضی آڈٹ کاغذوں کی حدتک محدود جبکہ درجنوں بھر پرائیویٹ سکول و کالجز محکمہ کی پالیسی کے مطابق پورا اترنے سے قاصر ۔ ذرائع ۔
اعلیٰ حکام نوٹس لیں شہریوں کی اپیل ۔
جھنگ (محمد جاوید اعوان)
شہر بھر اور گردونواح میں جگہ جگہ غیر قانونی طور پر قائم پرائیویٹ کالجز و سکولوں کی بھرمار ۔ متعلقہ ضلعی افسران جیبیں گرم کرنے تک محدود ۔ باہر سے آنے والی آڈٹ ٹیمیں بھی بھاری نذرانے وصول کر کے خاموش تماشائی کا کردار ادا کرنے میں مصروف ۔ ذرائع ۔ میڈیا سروے کے دوران شہر بھر میں سکول و پرائیویٹ کالجز غیر رجسٹرڈ پائے گئے ہیں کسی کے پاس رجسٹریشن تو ہے مگر حکومت کی طرف سے عائد کردہ پالیسی کے مطابق نہ بچوں کے لیے کھیل کے گراؤنڈ ۔ نہ ریفریش منٹ کا مناسب انتظام ۔ ناقص ترین اشیاء کی مہنگے ترین ریٹس پر فروخت ۔ نہ سائیکل ۔ موٹر سائیکل سٹینڈز ۔ ڈپٹی کمشنر جھنگ کی ناک کے نیچے دارالسکینہ روڈ پر واقع آفیسر سکول کی انتظامیہ کی جانب سے قائم اہم ترین شاہراہوں پر غیر قانونی قائم سٹینڈز کئی سوالات کو جنم دے رہے ہیں ۔ صبح سے دوپہر تک ٹریفک جام رہنا معمول شہریوں کو مشکلات کا سامنا ضلعی انتظامیہ کی نااہلی کا منہ بولتا ثبوت ہے ۔ تو دوسری جانب جامع چوک پر واقع فاران گرلز کالج سکول کی انتظامیہ کی جانب سے غنڈہ گردی عروج پر پہنچ چکی ہے ۔ یہ بات قابل ذکر ہے کہ فاران کالج و سکول کے ذاتی سائیکل ۔ موٹر سائیکل سٹینڈز نہ ہونے کے باعث ملحقہ محکمہ پراونشل جنگلات کی طرف سے پارک میں لگائی جانے والی پلانٹیشن کے ہرے بھرے سر سبز تندرست لاکھوں روپے مالیت کے قیمتی درختوں کا قتل عام کرواکر ڈکار جانے کے بعد اس جگہ بدمعاشی و غنڈہ گردی کرتے ہوئے سائیکل ۔ موٹر سائیکل سٹینڈز قائم کر رکھا ہے ۔ رپورٹنگ کے دوران یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ میونسپل کمیٹی کے نام نہاد عناصر ۔ ٹریفک پولیس کے شیر جوان اس حوالے سے منتھلیاں وصول کرتے ہیں ۔ محکمہ پراونشل جنگلات کی پلانٹیشن کے حوالے سے متعلقہ افسران کو متعدد بار آگاہ کرنے کے باوجود یہ افسران سنی ان سنی کر دیتے ہیں ۔ فاران کالج ذرائع کے مطابق معلوم ہوا ہے کہ ایس ڈی او ہیڈ کوارٹر جنگلات کو بھی ماہانہ سائیکل سٹینڈز کی مد میں اور فاران کالج کے سیوریج کی اس جنگلات کے پارک اور پلانٹیشن کی طرف نکاسی کے عوض بیس ہزار روپے ادا کرتے ہیں ۔ جبکہ محکمہ جنگلات کے افسران کے مطابق کوئی کرایہ وصول نہیں کیا جاتا ۔ اور ان درختوں کے چوری کرنے کی بابت ڈیمج رپورٹ بنا رہے ہیں اور ان فاران کالج انتظامیہ کو کئی بار نوٹس کر دیا گیا ہے کہ سیوریج کے پانی کا ذاتی انتظام کریں مگر ان کی طرف سے غنڈہ گردی کی جاتی ہے ۔فاران کالج کے انتظامیہ ٹس سے مس نہیں ہوتے۔ گوجرہ روڈ پر واقع سپیریئر کالج کی انتظامیہ کی طرف سے ہائی وے کی حدود میں غیر قانونی قائم سائیکل۔ موٹر سائیکل سٹینڈ بھی ضلعی انتظامیہ کی نااہلی عدم توجہی کی عکاسی کر رہا ہے ۔ جس کے باعث سارا سارا دن ٹریفک کا نظام مکمل طور پر مفلوج رہتا ہے ۔ راہگیروں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے ۔ جس پر عوامی وسماجی کاروباری شہری حلقوں نے چوہدری پرویز الٰہی وزیر اعلیٰ پنجاب ۔ چیف سیکرٹری پنجاب ۔ کمشنر فیصل آباد ۔ ڈپٹی کمشنر جھنگ سمیت دیگر اعلیٰ حکام سے فوری نوٹس لینے کا پرزور مطالبہ کیا ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں