21

اٹھارہ ہزاری(محمد جاوید اعوان)سردی آتے ہی مہنگائی کی وجہ سے خشک میوہ جات عام آدمی کی پہنچ سے دورھوگئے۔

اٹھارہ ہزاری(محمد جاوید اعوان)سردی آتے ہی مہنگائی کی وجہ سے خشک میوہ جات عام آدمی کی پہنچ سے دورھوگئے۔
تفصیلات کے مطابق سرد موسم شروع ہوتے ہی خشک میوہ جات مونگ پھلی،اخروٹ،کاجو،بادام،انجیر ودیگر کی فروخت میں اضافہ ہوگیا ہے،شہریوں کا خشک میوہ جات خریدنےکیلئےٹھیلوں اور دوکانوں پررش بڑھنے لگا دوکاندارں نےبھی اپنے من مرضی کے ریٹ لگانےشروع کردیےہیں،خشک میوہ جات کی قیمتوں میں ہوشربا اضافے کی وجہ متوسط اورغریب طبقے کے افراد صرف بھاؤ پوچھنے تک ہی محدود ہو کر رہ گئے شہریوں کا کہنا ہے کہ ملک کےاندرپائے جانےوالےخشک میوہ جات کی قیمتوں میں تیزی سے اضافہ سمجھ سے بالاتر ہے شہریوں کاانتظامیہ سے خشک میوہ جات کی قیمتیں مناسب متعین کرنے کا مطالبہ کیا ہے،اٹھارہ ہزاری میں دوکانداروں کی طرف سےخشک میوہ جات کی جوقیمتیں بتائی گئیں ان کےمطابق نارمل کوالٹی کی مونگ پھلی 450روپے سے650روپےتک،چلغوزہ 5000ہزارسے6500روپےکلوتک،پستہ 2400روپےکلوسے3000روپےکلوتک،عام کوالٹی کی کجھوریں350روپے سے700روپےتک،بادام گری 1600سے2000روپےکلوتک ہے،اس طرح دیگرمیوہ جات کی قیمتیں بھی عام آدمی کامنہ چڑھاتی نظرآتی ہیں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں