59

جھنگ (محمد جاوید اعوان)حکومت آئی ایم ایف سے ایک ارب ڈالر قرض کے لئے مذاکرات کر رہی ہے پٹرولیم مصنوعات اور بجلی سمیت 70 سے زائد اشیاء کی قیمتوں میں اضافے کے ساتھ ساتھ کھانے پینے کی اشیاء کی قیمتوں میں بھی اضافہ کر دیا گیا ھے۔ مزید تفصیلات کے لیے لنک پر کلک کریں

جھنگ (محمد جاوید اعوان)حکومت آئی ایم ایف سے ایک ارب ڈالر قرض کے لئے مذاکرات کر رہی ہے پٹرولیم مصنوعات اور بجلی سمیت 70 سے زائد اشیاء کی قیمتوں میں اضافے کے ساتھ ساتھ کھانے پینے کی اشیاء کی قیمتوں میں بھی اضافہ کر دیا گیا ھے۔ مزید تفصیلات کے لیے لنک پر کلک کریں
قیمتوں میں اضافے سے عام آدمی کے لیے زندہ رہنا مشکل ہو گیا ہے ان خیالات کا اظہار پاکستان مسلم لیگ ن خواتین ونگ ضلع جھنگ کی صدر اور سابق چیئرپرسن ضلعی زکواة و عشر کمیٹی جھنگ بیگم عابدہ بشیر چوہدری نے اپنے ایک بیان میں کیا انہوں نے کہا کہ بے بس عوام کا نا صرف جینا محال ہوگیا ہے بلکہ مہنگائی نے بے بس عوام کو زندہ درگور کر دیا ہے۔لوگ اپنے بچوں کے تعلیمی اور دوسرے اخراجات کے بارے میں سوچنے پر مجبور ہوں گے جو پہلے ہی دو وقت کی روٹی بھی بمشکل کھا رہے ہیں ریاست مدینہ کا خواب دیکھانے والا سلیکٹڈ وزیراعظم نے عوام کا جینا دوبھر کر دیا جتنی کرپشن موجودہ دور حکومت میں ہورہی ہے شاہد سابقہ ادوار حکومتوں میں ہوئی ہو اس نے تو ریکارڈ توڑ دیئے ہیں انصاف نام کی کوئی چیز دیکھائی ہی نہیں دیتی ۔حکومت لوگوں کو دوبارہ تانگوں اور سائیکل کی سواری پر مجبور کر رہی ہے بیگم عابدہ بشیر کا یہ بھی کہنا تھا کہ عوام کیلئے چینی بھی ایک خواب بنتی جارہی ہے اب تو لوگ یہ سوچنے پر مجبور ہوگئے ہیں کہ کاش ہم شوگر کے مریض ہوتے اور چینی نہ خرید کرنا پڑھتی نیازی صاحب خدا کا خوف کر عوام کو خود کشیاں کرنے پر نہ مجبور کر غریب عوام پہلے ہی خوردونوش اشیاء خریدنے سے بے بس تھے اوپر سے پٹرولیم کی مصنوعات اور ادویات میں بے دریغ اضافہ کرکے لوگوں کو فاقوں پر مجبور کیا جارہا ویسے غریبوں کو مار دے عوام آخری سسکیاں لے رہی تھی اوپر سے آپ نے بجلی کا بم گرا دیا آپ کو مرنا یاد نہیں پھر کہتا ہے گھبرانا نہیں ۔درآمد شدہ چینی کی تشہیر پر لاکھوں خرچ کیا جارہا ہے مگر وہ باریک چینی بھی نہیں ملتی کیوں عوام کو دھوکہ دے رہے ہو ذخیرہ اندوزوں کو پکڑ سکتے نہیں ہو اور غریب دوکانداروں کیلئے قانون حرکت میں آجاتا ہے آئی ایم ایف کی خوشنودی کیلئے بجلی ،پٹرول ،میڈسن اور دیگر ضرورت زندگی کی اشیاء میں بے دریغ اضافہ نے کمر توڑ کر رکھ دی ہے۔مہنگائی کو عالمی مسئلہ قرار دیکر جھوٹ بولنے کے تمام ریکارڈ توڑ ڈالے ہیں جب تک عوام سڑکوں پر نہیں آئے گی تو اس وقت تک اس سلیکٹڈ حکومت سے چھٹکارہ حاصل نہیں کر سکتے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں