53

جھنگ۔لگان کی مدمیں کروڑوں روپےکےڈیفالٹر سرکاری زمین پرعرصہ درازسےناجائزقابض۔سابقہ ڈپٹی کمشنراورتحصیلدار۔اےسی کی طرف سےچیف جسٹس ہائیکورٹ کی عدالت میں فرضی وجعلی وارنٹ دخل کی کاروائیاں جمع کروانےکاانکشاف۔3سالہ ٹینڈرگرہندہ 2سال گزرنےکےباوجود دربدرکی ٹھوکریں کھانےپرمجبور۔متعددبارکاغذوں کی حدتک فقط دکھاوےکی فرضی کاروائیوں کےدوران ریونیوافسران اورمقامی پولیس کےساتھ قبضہ مافیاکی طرف سےشدیدمزاحمت کاسامنا۔نوٹوں کی چمک یابااثرقبضہ گروپ کےسامنےضلعی افسران گھٹنےٹیکنےپرمجبور۔چیف سیکرٹری پنجاب۔آئی جی پنجاب کیلیےلمحہ فکریہ۔عثمان بزدار وزیراعلی پنجاب نوٹس لیں۔عوامی سماجی حلقوں کامطالبہ۔

جھنگ۔لگان کی مدمیں کروڑوں روپےکےڈیفالٹر سرکاری زمین پرعرصہ درازسےناجائزقابض۔سابقہ ڈپٹی کمشنراورتحصیلدار۔اےسی کی طرف سےچیف جسٹس ہائیکورٹ کی عدالت میں فرضی وجعلی وارنٹ دخل کی کاروائیاں جمع کروانےکاانکشاف۔3سالہ ٹینڈرگرہندہ 2سال گزرنےکےباوجود دربدرکی ٹھوکریں کھانےپرمجبور۔متعددبارکاغذوں کی حدتک فقط دکھاوےکی فرضی کاروائیوں کےدوران ریونیوافسران اورمقامی پولیس کےساتھ قبضہ مافیاکی طرف سےشدیدمزاحمت کاسامنا۔نوٹوں کی چمک یابااثرقبضہ گروپ کےسامنےضلعی افسران گھٹنےٹیکنےپرمجبور۔چیف سیکرٹری پنجاب۔آئی جی پنجاب کیلیےلمحہ فکریہ۔عثمان بزدار وزیراعلی پنجاب نوٹس لیں۔عوامی سماجی حلقوں کامطالبہ۔
جھنگ۔(محمد جاوید اعوان)جھنگ مکمل طورپر قبضہ مافیاکےرحم وکرم پر۔متعلقہ ضلعی افسران دمادم مست قلندر۔ افسران بالا قبضہ مافیاکی سرپرستی کرنےکی تنخواہیں۔مراعات بٹورنےلگے۔شہریوں کےگلےشکوے۔باربارشکایات پرچیف سیکرٹری پنجاب بھی خواب خرگوش کی نیندمیں محؤ۔تفصیلات کےمطابق جھنگ کے نواحی علاقہ چک460 ج ب میں سرکاری زمین پرقبضہ مافیاگروپ نےلاٹ نمبر11پرعرصہ درازسےناجائزقبضہ جمارکھاہے۔اوریہ 3سالہ ٹینڈرفیض خان نامی شخص کو الاٹ کیاگیا۔جس پرمذکورہ شخص نےتمام واجبات خزانہ سرکارمیں بھی جمع کروارکھےہیں۔اوراسسٹنٹ کمشنرکی طرف سےاس سرکاری رقبہ کوقبضہ مافیاسےقبضہ واگزارکرواکرٹینڈر گرہندہ کوقبضہ دلوانےکی غرض سےکئی مرتبہ وارنٹ دخل جاری کرچکےہیں۔اورموقع پرنقص امن کےشدیدخطرہ کےباعث اسسٹنٹ کمشنرتحصیل جھنگ کی طرف سےپولیس امدادکیلیےڈسٹرکٹ پولیس آفیسرجھنگ کومتعددبارلیٹرلکھےجا چکےہیں۔اوریہ امرقابل ذکرہےکہ کئی مرتبہ متعلقہ عملہ فیلڈ ریونیو۔اورمقامی تھانہ سیٹلائٹ ٹاؤن کی پولیس وارنٹ دخل پرعمل درآمدکروانےکیلیے سائل ٹینڈرگرہندہ کےجیب خرچ پرموقع پرگئےمگربااثرقبضہ مافیاکی جانب سےہربارمزاحمت کاسامناکرنےپرریونیو افسران و پنجاب پولیس کےرنگیلےشیرجوان منہ کی کھاکرواپس لوٹنےپرمجبورہوجاتے رہے۔ذرائع کےمطابق یہ بھی علم ہواہےکہ ہائیکورٹ لاھورمیں دائررٹ پٹیشن نمبر15383سنہ 2010میں روزنامچہ واقعاتی دیہہ ھذامیں رقبہ متذکرہ کی بابت وارنٹ دخل کی فرضی وجعلی کاروائی درج کرکےعدالت عالیہ لاھورہائیکورٹ کی فاضل عدالت میں بوگس رپورٹ جمع کروائی گئی اورعدالت سےبھی تحصیلدار۔اسسٹنٹ کمشنرجھنگ۔ڈپٹی کمشنرجھنگ کی طرف سےفراڈکیاگیا۔جبکہ دیہہ ھذاکےرجسٹرخسرہ گرداوری میں گرداوریاں پیشہ ورقبضہ مافیاگروپ کےقبضہ کاواضع ثبوت ہیں۔یہ بات قابل ملاحظہ ہےکہ اب یہ رقبہ قبضہ گروہ نےمزیدلاکھوں روپےکےعوض اسٹام پیپرکےذریعے مزیدآگےٹھیکےپردیاہواہے۔اورخزانہ سرکارکودونوں ہاتھوں سےلوٹاجارہاہے۔یہ بھی واضع رہےکہ قبضہ گینگ قبل ازیں لگان کی مدمیں حکومت کی کروڑوں روپےکی نادہندہ ہے۔اورضلعی افسران یہ رقم وصول کرنےمیں بھی بری طرح ناکام ہوچکی ہے۔شہریوں کاکہناہےکہ۔قبضہ گروپ نےچک460 میں موجودجناح کالونی کارقبہ بھی ریونیوافسران سےسازبازکرکےپلاٹ فروخت کررہےہیں۔اورکئی مرتبہ شکایات کےباوجودمعاملہ جوں کاتوں ہے۔جس پرعوامی سماجی حلقوں نےعثمان بزدار وزیراعلی پنجاب۔چیف جسٹس ہائیکورٹ لاھور۔چیف سیکرٹری پنجاب۔آئی جی پنجاب پولیس۔کمشنرفیصل آباد۔ڈپٹی کمشنرجھنگ سےاپیل کی ہےکہ فوری نوٹس لیتےہوئے بااثرقبضہ مافیاسےرقبہ واگزارکروایاجائےاور قبضہ گروہ۔اورمحکمہ پولیس و ریونیوکی بدنامی کاباعث بننےوالے ملوث پولیس و ریونیو افسران کاتعین کرکےان کےخلاف سخت قانونی کاروائی عمل میں لائی جائے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں