34

منڈی مدرسہ(عبدالقادر فاروقی)بجلی کے بلوں پر عائد ٹیکسز نے شہریوں کا جینا محال کردیا ۔ مہنگائی کے ہاتھوں تنگ غریب صارفین زندہ درگور ہو چکے ہیں ۔

منڈی مدرسہ(عبدالقادر فاروقی)بجلی کے بلوں پر عائد ٹیکسز نے شہریوں کا جینا محال کردیا ۔ مہنگائی کے ہاتھوں تنگ غریب صارفین زندہ درگور ہو چکے ہیں ۔ فیول ایڈجسٹمنٹ کے نام پرناجائزاضافہ سمیت سرچارج اور اضافی ٹیکس فوری ختم کئے جائیں شہریوں کا مطالبہ ۔ تفصیلات کے مطابق مہنگائی کے اس دور میں حکومت کی جانب سے زرعی کمرشل اور گھریلوں بجلی کے بلوں پر عائد ٹیکسز نے شہریوں کا جینا محال کردیا ہے، گھریلو بجلی کے بل میں الیکٹرک سٹی ڈیوٹی، ٹی وی فیس،جی ایس ٹی، انکم ٹیکس، ایکسٹر ا ٹیکس، نیلم جہلم سرچارج، جی ایس ٹی آن ایف پی اے، ایکسٹراٹیکس آن ایف پی اے، ای ڈی آن ایف پی اے،میٹر رینٹ‘ سروس رینٹ، فیول پرائس ایڈجسٹمنٹ، ایف سی سرچارج، ٹی آر سرچارج فیول ایڈجسٹمنٹ سمیت کچھ دیگر خفیہ ٹیکس شامل ہیں ۔ جو کہ بجلی کے اصل بل پر155فیصد سے زائد ٹیکس لگادئیے جاتے ہیں ۔ اس طرح صارفین کو بے دردی سے لوٹا جا رہا ہے ۔ مہنگائی کے ہاتھوں تنگ غریب صارفین زندہ درگور ہو چکے ہیں ۔ عوام نے چیف جسٹس آف پاکستان سے اپیل کی گئی ہے کہ گھریلو بل اور زرعی بلوں پر فوری طور پر نوٹس لیتے ہوئے ناقابل برداشت ٹیکسز ختم کرائے جائیں ظلم کا سلسلہ بند کرائیں تاکہ قوم کو تھوڑا ریلیف مل سکے ۔ چیف جسٹس مفاد عامہ کے تحت ازخود نوٹس لیں اور اضافی ٹیکس ختم کرائیں ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں