33

بلڈنگ ڈیپارٹمنٹ کےکرپٹ مافیا اور ٹھیکیدار کے گٹھ جوڑ نے ڈگری کالج برائے خواتین رتہ متہ کی طالبات کا مستقبل داؤ پر لگا دیا۔دس کروڑ کی خطیر رقم سے تیار کی گئی مذکورہ کالج کی بلڈنگ میں انتہائی ناقص و غیر معیاری میٹریل کے استعمال کی وجہ سے کوئی بڑا سانحہ رونما ہونے کا خدشہ۔مذکورہ ٹھیکیدار بلڈنگ کی تعمیر مکمل کیے بغیر ہی پے منٹس اور پرفارمنس سیکورٹی لے کر رفو چکر ہو گیا بلڈنگ چند ماہ کے اندر خستہ حالی کا شکار ۔ عوامی و سماجی حلقوں نے وزیر اعلی پنجاب سمیت دیگر حکام سے مذکورہ صورتحال کا فوری نوٹس لے کر اعلی سطحی شفاف تحقیقات کروانے کا مطالبہ کیا ہے۔

بلڈنگ ڈیپارٹمنٹ کےکرپٹ مافیا اور ٹھیکیدار کے گٹھ جوڑ نے ڈگری کالج برائے خواتین رتہ متہ کی طالبات کا مستقبل داؤ پر لگا دیا۔دس کروڑ کی خطیر رقم سے تیار کی گئی مذکورہ کالج کی بلڈنگ میں انتہائی ناقص و غیر معیاری میٹریل کے استعمال کی وجہ سے کوئی بڑا سانحہ رونما ہونے کا خدشہ۔مذکورہ ٹھیکیدار بلڈنگ کی تعمیر مکمل کیے بغیر ہی پے منٹس اور پرفارمنس سیکورٹی لے کر رفو چکر ہو گیا بلڈنگ چند ماہ کے اندر خستہ حالی کا شکار ۔
عوامی و سماجی حلقوں نے وزیر اعلی پنجاب سمیت دیگر حکام سے مذکورہ صورتحال کا فوری نوٹس لے کر اعلی سطحی شفاف تحقیقات کروانے کا مطالبہ کیا ہے۔
جھنگ (بیورو رپورٹ)حکومت پنجاب کے واضح احکامات کے باوجود جھنگ کے بعض سرکاری محکموں میں کرپشن اور بدعنوانیوں کے واقعات میں نرمی پیدا ہونے کی بجائے مزید تیزی پیدا ہوگئی ہے اور بعض کرپٹ اہلکار سرکاری خزانہ کو شیریں مادر سمجھ کر ہڑپ کرنے میں مصروف ہیں جس کی واضح مثال بلڈنگز ڈیپارٹمنٹ جھنگ میں موجود کرپٹ مافیا کی ھے جنہوں نے گورنمنٹ ڈگری کالج برائے خواتین رتہ متہ بلڈنگ کی تعمیر سمیت دیگر ورکس میں انتہائی غیرمعیاری اور ناقص میٹریل استعمال کرنے کی مذکورہ ٹھیکیدار کو کھلی چھٹی دے رکھی تھی جس بناء پر مذکورہ بلڈنگ چند ماہ کے اندر ہی ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہونا شروع ہوگئی ہے جس کی وجہ سے اہل علاقہ میں شدید اضطراب پایا جاتا ہے کیونکہ مذکورہ کالج میں زیر تعلیم طالبات کی زندگیاں بھی داؤ پر لگ چکی ہیں لیکن ان کا کوئی پرسان حال نہ ہےجبکہ بلڈنگز ڈیپارٹمنٹ کی طرف سے انتہائی ناقص میٹریل سے تیار کی گئی بلڈنگ کسی بھی وقت زمین بوس ہو کر معصوم طلباء کی قیمتی جانیں لے سکتی ہے جو بعد میں حکومت پنجاب کے لیے باعث ندامت بن سکتا ہے اس ندامت سے پہلے ہی حکومت پنجاب کو ایسے کرپٹ افسران کا قبلہ درست کرنے کی ضرورت ہے محکمہ بلڈنگ کے متعلقہ کرپٹ سب انجینئر ،ایس ڈی او،ایکسیئن کی لاپرواہی ،غفلت،سائیڈ وزٹ کیے بغیرچمک کے باعث سب اوکے کر کے نہ صرف ٹھیکیدار کو پیمنٹ کر دیں گئی بلکہ پرفارمنس سیکورٹی بھی واپس کر دی گئی ہے جو کہ مبینہ ملی بھگت کا منہ بولتا ثبوت ہے عوامی و سماجی حلقوں نے وزیر اعلی پنجاب سمیت دیگر حکام سے مذکورہ صورتحال کا فوری نوٹس لے کر اعلی سطحی شفاف تحقیقات کروانے کا مطالبہ کیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں