34

چین نے اپنی آبادی میں مسلسل کمی کو دیکھتے ہوئے والدین کو3 بچے پیدا کرنے کی اجازت دے دی مزید تفصیلات کے لیے لنک پر کلک کریں

چین نے اپنی آبادی میں مسلسل کمی کو دیکھتے ہوئے والدین کو3 بچے پیدا کرنے کی اجازت دے دی مزید تفصیلات کے لیے لنک پر کلک کریں

چین نے اپنی آبادی میں مسلسل کمی کو دیکھتے ہوئے اہم شہروں میں والدین کو3 بچے پیدا کرنے کی اجازت دے دی ہے۔چین میں 1960 سے شرح پیدائش میں کم ہو رہی ہے۔ کم ہوتی شرح پیدائش کو روکنے کیلئے2015 میں’ایک بچہ‘ پالیسی سے پابندی ہٹا لی گئی تھی، لیکن اس کے باوجود گزشتہ ماہ سب سے کم شرح پیدائش…

دس سال بعد ہونے والی گزشتہ مردم شماری کے مطابق چین کی آبادی میں سالانہ0.53 فیصد اضافہ ہوا۔ سال2000 تا2010 کے اعدادوشمار کے مطابق چین کی آبادی میں سالانہ0.57 فیصد اضافہ ہوا تھا۔

گزشتہ سال تقریباً ایک کروڑ 20 لاکھ بچے پیدا ہوئے جو کہ2016 میں ایک کروڑ 80 لاکھ بچوں کی پیدائش سے نمایاں طور پر کم ہیں۔ کم ہوتین شرح پیدائش کے سبب مستقبل میں جوانوں سے بوڑھے افراد کی تعداد زیادہ ہو جائے گی۔

چین نے اپنے ملک میں آبادی کے کنٹرول کیلئے تقریبا40 سال تک’ایک بچہ‘ پالیسی کو نافذ رکھا۔ بعد ازاں2 بچوں کی اجازت دینے کے باوجود بھی چینی آبادی میں مسلسل کمی دیکھی گئی۔

آبادی میں مسلسل کمی کی ایک وجہ بچے کی پرورش پر آنے والے اخراجات بھی بتائے جاتے ہیں۔ چین میں مسلسل کم ہوتی شرح پیدائش کو دیکھتے ہوئے پیدائش پر کنٹرول کی پالیسیوں کے خاتمے کا مطالبہ کیا جارہا تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں