66

>*اسلام آباد پولیس کا علی الصبح خطرناک بین الصوبائی کارلفٹر گینگ کے ساتھ مقابلہ*۔

*اسلام آباد پولیس کا علی الصبح خطرناک بین الصوبائی کارلفٹر گینگ کے ساتھ مقابلہ*۔

پولیس مقابلے میں خطرناک کارلفٹرز گینگ کے 3 ملزمان اپنے ساتھیوں کی فائرنگ سے ہلاک۔

اسلام آباد پولیس پچھلے دو ماہ سے اس خطرناک گینگ کے تعاقب میں تھی، سیف سٹی کیمروں اور انسانی ذرائع سے اس گینگ کی معلومات اکٹھی کی گئی تھیں۔

اس گینگ کی آمدورفت کے حوالے سے ایک روٹ بنایا گیا تھا۔

ذرائع نے پولیس کو اطلاع دی تھی کہ یہ گینگ مری کے طرف نکلا ہے۔

اس اطلاع پر اے وی ایل سی، سی آر ٹی اور اے ٹی ایس کی ٹیموں نے مختلف علاقوں میں خصوصی ناکے قائم کئے۔

آج صبح کشمیر چوک ناکے پر موجود پولیس ٹیموں نے مری روڈ سے آتی ان کی گاڑیوں کو روکنے کی کوشش کی۔

ملزمان 2 گاڑیوں میں سوار تھے جن میں ایک “جی ایل آئی” اور دوسری “ہنڈا سوک” گاڑی تھی۔

گاڑیوں میں موجود گینگ ممبران نے اچانک پولیس ٹیموں پر فائرنگ شروع کردی۔

جی ایل آئی کار سواروں کی فائرنگ سے ان کے اپنے تین ساتھی ملزمان ہلاک ہوگئے۔

فائرنگ میں ایک عورت بھی زخمی ہوئی جبکہ جی ایل آئی گاڑی سے فائرنگ کرنے والے ملزمان فرار ہوگئے۔

ڈیڈ باڈیز اور زخمی کو فوری ہسپتال منتقل کیا گیا۔

ڈیڈ باڈیز کی شناخت الیاس خان سکنہ چارسدہ، وقاص خان سکنہ چارسدہ ہوئی، ایک ڈیڈ باڈی کی شناخت جاری ہے۔

زخمی عورت کی شناخت حسیبہ امجد کے نام سے ہوئی۔

ہلاک ملزم الیاس خان خطرناک کارلفٹر گینگ کا سرغنہ جبکہ باقی گینگ ممبر ہیں۔

ملزمان نے رات کو مری سے گاڑی چوری کی اور فرار ہورہے تھے۔

دوسری گاڑی ہنڈا سوک بھی لاہور سے چھینی گئی تھی۔

ہنڈا سوک کار سے متعدد غیر نمونہ نمبر پلیٹس، جیمر، موبائلز، اگنیشن بریکر ، ایس ایم جی گن، پسٹلز برآمد۔

پولیس کی بھاری نفری موقع پر پہنچ گئی، فرار ملزمان کی گرفتاری کے لئے مختلف ٹیمیں روانہ کردی گئیں۔

ملزمان متعدد مقدمات میں پولیس کو مطلوب تھے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں