47

*جھنگ(جاوید اعوان سے)ہیلتھ اتھارٹی جھنگ میں جنرل ڈیوٹیاں ختم کرنے کے احکامات پر تاحال عملدرآمد نہ ھوسکا CEO آفس میں نصر اللہ۔ وریام۔ توکل اور فرخ حبیب کس قانون کے تحت ڈیوٹی کر رھے ہیں عوام کی استدعا*

*جھنگ(جاوید اعوان سے)ہیلتھ اتھارٹی جھنگ میں جنرل ڈیوٹیاں ختم کرنے کے احکامات پر تاحال عملدرآمد نہ ھوسکا CEO آفس میں نصر اللہ۔ وریام۔ توکل اور فرخ حبیب کس قانون کے تحت ڈیوٹی کر رھے ہیں عوام کی استدعا*
*ہیلتھ اتھارٹی جھنگ میں جنرل ڈیوٹیاں ختم کرنے کے احکامات پر تاحال عملدرآمد نہ ھوسکا CEO آفس میں نصر اللہ۔ وریام۔ توکل اور فرخ حبیب کس قانون کے تحت ڈیوٹی کر رھے ہیں عوام کی استدعا* سیکریٹری پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ پنجاب کی طرف سے
سی ای او ہیلتھ اتھارٹی کو سخت اقدامات اٹھانے اور ذمہ داروں کے خلاف کاروائی کی ہدایت کی گئی تھی جس پر عملدرآمد کا اندازہ اس امر سے لگایا جا سکتا ہے اپنی اصل ڈیوٹیوں پر بھجوائے گئے نیوٹریشن سپروائزر کچھ صبح کو حاضریاں لگا کر واپس سی ای او ہیلتھ اتھارٹی جھنگ آفس اور دیگر مقامات پر مختلف چارج پر مسلط ہونے سمیت دیگر انتظامی دفاتر میں آجاتے ہیں جس کی وجہ سے نہ صرف ان دفاتر میں کھینچا تانی اور اقربا پروری کے باعث مختلف پروگرامز پر عملدرآمد کے حوالے سے ہر مہینہ فرضی رپورٹوں کے ذریعے مجرمانہ غفلت کا مظاہرہ کیا جا رہا ہے، قبل ازیں ڈبلیو ایچ او کی ٹیم نے بھی دیگر اضلاع میں اس حوالے سے انتہائی ناقص کارکردگی کی نشاندھی کی تھی جس پر تاحال جھنگ انتظامیہ و محکمہ صحت جھنگ سمیت اعلیٰ حکام کی آنکھیں بند ہیں متعلقہ اتھارٹی کیجانب سے تادیبی کاروائی کیلئے ذمہ داران کو شوکاز نوٹسز و کاروائی نہ کرنا بااثر ہونے اور ان ملازمین کا اثر رسوخ دکھائی دیتا ہے تمام حقائق گورنمنٹ آف پنجاب کیجانب سے جاری کئے گئے نوٹیفکیشنز پر عملدرآمد کرنے کی بجائے لاپرواہی و عمل کے باعث مزید کاروائی روک کر معاملہ کو دبا دیا جاتا ہے،محکمہ صحت جھنگ میں نیوٹریشن سپروائزرز کا شعبہ سفید ہاتھی بن کر رہ گیا ہے یہاں وسائل اور فنڈز کے بے دریغ استعمال کے علاوہ کچھ بھی نہیں، جبکہ یہ امر بھی باعث تشویش ہے کہ فیلڈ ورک نہ ہونے کی وجہ سے بچوں میں ہیلتھ رسک بڑھنے کا اندیشہ ہے۔ ذرائع نے یہ بھی بتایا ھے کہ جو سپروایزر دفتر میں کام کرتے ہیں فیلڈ میں انکا کام کوئی بھی نہیں کرتا ھے اور بوگس انٹرویوں سے کام چلایا جاتا ھے یاد رھے کہ ان دفاتر میں اکثر کلرکس کو کھڈے لائن لگایا ھوا ھے جن کا اکثر یہ کام ھے اس سلسلے میں سی ای او ہیلتھ اتھارٹی سے رابطہ کیا گیا تو انھوں نے بتایا کہ عملہ کم ھونے کی وجہ سے ایس کیا گیا ھے یونہی عملہ پورا ھو جائے گا ان کو واپس انکی جگہوں پر بھیج دیا جائے گا عوامی اور سماجی حلقوں نے وزیر اعلیٰ پنجاب مریم نواز شریف چیف سیکریٹری پنجاب وزیر صحت پنجاب صوبائی سیکرٹری پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ پنجاب اور کمشنر فیصل آباد ڈویژن فیصل آباد ڈپٹی کمشنر/ایڈمنسٹریٹر ہیلتھ اتھارٹی جھنگ سے مطالبہ کیا ھے کہ ایسی جگہوں پر کام کرنے والے تمام سٹاف کو اپنی اپنی جگہوں پر ڈیوٹی کے لیے بھیجا جائے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں