21

عبدالحکیم (عبدالروف عاقب) کپاس کے کھیتوں میں زیادہ پانی کھڑا ہونے سے سانس لینے کا عمل اور پودے میں خوراک بنانے کا عمل رک جاتا ہے، جس کے سبب پھول اور چھوٹے ٹینڈے گرنا شروع ہو جاتے ہیں

عبدالحکیم (عبدالروف عاقب) کپاس کے کھیتوں میں زیادہ پانی کھڑا ہونے سے سانس لینے کا عمل اور پودے میں خوراک بنانے کا عمل رک جاتا ہے، جس کے سبب پھول اور چھوٹے ٹینڈے گرنا شروع ہو جاتے ہیں ان خیالات کا اظہار اسسٹنٹ ڈائریکٹر زراعت توسیع کبیروالا ڈاکٹر منظور احمد گل نے کوٹ بہادر، علی پور، جودھپور، چوپڑہٹہ اور تحصیل کبیروالہ کے دیگر علاقوں میں حالیہ بارشوں کے بعد کپاس کی فصل کا معائنہ کرنے کے دوران کاشتکاروں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ اگر پانی 48 گھنٹوں سے زائد وقت کے لئے کپاس کے کھیتوں میں کھڑا رھے تو پودے مرجھانا شروع ہو جاتے ہیں اس لیے کپاس کے کاشتکار خاص طور پر زائد پانی نشیبی جگہ یا پھر خالی کھیتوں میں نکال دیں یا کم از کم انہی کھیتوں کی سائیڈ پر دس فٹ لمبا چھ فٹ چوڑا اور پانچ فٹ گہرا گڑھا کھود کر اس میں نکال دیں۔ بارش کے بعد یوریا دو کلوگرام ، زنک سلفیٹ 250 گرام بورک ایسڈ 17 فیصد 300 گرام میگنیشیم سلفیٹ 300 گرام اور پوٹاشیم نائٹریٹ 200 گرام فی 100 لٹر پانی میں ملا کر ایک ہفتہ کے وقفہ سے دو سپرے کریں اور فصل کو بڑھوتری کے مطابق کھاد ڈالیں۔ انہوں نے بتایا کہ محکمہ زراعت توسیع کبیروالا کا عملہ کاشتکاروں کی رہنمائی کے لیے فیلڈ میں موجود ہے کسی بھی قسم کے مشورے کے لیے اپنے علاقے کے محکمہ زراعت کے نمائندے سے رابطہ رکھیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں