42

جھنگ۔ریونیو حکام کی غفلت ولاپرواہی کے باعث پٹواریوں کے بڑے پیمانے پر فراڈ۔ روزنامچہ واقعاتی میں کٹنگ ٹیمپرنگ کے علاؤہ اوراق پھاڑ کر تبدیل کرنے کے انکشافات۔اعلی حکام متوجہ ھوں عوامی وسماجی حلقے۔

جھنگ۔ریونیو حکام کی غفلت ولاپرواہی کے باعث پٹواریوں کے بڑے پیمانے پر فراڈ۔ روزنامچہ واقعاتی میں کٹنگ ٹیمپرنگ کے علاؤہ اوراق پھاڑ کر تبدیل کرنے کے انکشافات۔اعلی حکام متوجہ ھوں عوامی وسماجی حلقے۔
جھنگ (محمد جاوید اعوان) رجسٹر حقداران زمین سکنی جمع بندی کی طرح رجسٹر روزنامچہ واقعاتی رجسٹر خسرہ گردآوری یا ان کی فوٹو کاپی داخل تحصیل دفتر نہ کروانا لوٹ مار کا ذریعہ بنایا گیا ھے۔ پٹواریوں کی جانب سے بااثر لوگوں کے ساتھ مل ملاپ کرکے بھاری نذرانے وصول کر کے رجسٹر روزنامچہ واقعاتی اور خسرہ گردآوری کے رجسٹروں میں کٹنگ ٹیمپرنگ ورق پھاڑ کر تبدیل کرنے کی شکایات موصول ھونے کا سلسلہ شروع ھے۔جو سادہ لوح شہریوں کی ناصرف جیبوں پر ڈاکےڈالنے کا سبب بنتا جارہا ھے۔بلکہ افسوس کہ کروڑوں روپے مالیت کی اراضی مالکان کو رشوت کے چند سکوں کے عوض غیر مالک اور فراڈیے لوگوں کو کروڑوں روپے کی مالیت کے مالک بنا دیے جاتے ہیں۔ذرائع کے مطابق معلوم ھوا ھے کہ روزنامچہ واقعاتی 31 اگست تک ختم کر دیا جاتا ھے اور 1 ستمبر سے نئے سال کا روزنامچہ واقعاتی شروع کر دیا جاتا ھے جبکہ یہ بات قابل ذکر ھے کہ رجسٹر حقداران زمین کی طرح یہ روزنامچہ تحصیل دفتر اور NTO دفتر میں جمع کروائے جاتے ہیں اور نہ ہی ان کی کوئی فوٹو کاپی کروا کر ان دفاتر میں جمع کروائی جاتی ھے۔ واضح رھے کہ رجسٹر روزنامچہ واقعاتی اور خسرہ گردآوری کا تمام تر سرکاری ریکارڈ صرف پٹواریوں کے ھی پاس ھوتا ھے جس کے باعث یہ کرپشن بدعنوانیاں بےضابطگیاں عروج پر پہنچ چکی ہیں۔اس بارے موقف کے لیے کال کی گئی تو صاحب بہادر کا نمبر بند تھا۔اس بارے عوامی وسماجی کاروباری شہری حلقوں نے چوہدری پرویز الٰہی وزیر اعلیٰ پنجاب سمیت دیگر اعلیٰ حکام سے فوری نوٹس لینے کا پرزور مطالبہ کیا ھے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں