22

جھنگ ۔ (جاوید اعوان سے)BHU کوٹ لکھنانہ سہولیات کی بجائے مقتل گاہ میں تبدیل۔مزید تفصیلات کے لیے لنک پر کلک کریں۔

جھنگ ۔ (جاوید اعوان سے)BHU کوٹ لکھنانہ سہولیات کی بجائے مقتل گاہ میں تبدیل۔مزید تفصیلات کے لیے لنک پر کلک کریں۔
حاملہ عورتوں کے حمل گرانے کا دھندہ عروج پر ۔ ڈیلیوری کیسز کروانے والے مریضوں کے لواحقین کی جیبوں پر ڈاکےڈالنے کاسلسلہ جاری ۔ نذرانے پیش نہ کرنے والے لواحقین در بدر کی ٹھوکریں کھانے پر مجبور ۔ رشوت خور عملہ کی طرف سے رشوت نہ دینے والے شہریوں کو غلیظ ترین گالیاں دینے کا انکشاف ۔ نذرانے نہ دینے متعلقہ مڈ وائف اور دیگر نرسوں کی جانب سے زچہ و بچہ کی پیدائش کے وقت مناسب دیکھ بھال نہ ہونے پر کئی معصوم کلیوں جان سے ہاتھ دھو بیٹھیں ۔ متاثرین کی جانب سے کسی کی شکایت کرنے پر نام نہاد سٹاف کی طرف سے سرکاری بنیادی ہیلتھ سینٹر بند کروا دینے کی کھلے عام دھمکیاں ۔ لوٹ میلہ کرپشن بدعنوانیاں کی چور بازاری کے علم ہونے کے باوجود C.E.O محکمہ صحت جھنگ کی پر اسرار خاموشی سے کئی قسم کے سوالات جنم لینے لگے ۔ عرصہ دراز سے BHU میں وارد نام نہاد عناصر کے خلاف شکایات موصول ہونے کے باوجود نہ کاروائی نہ تبادلہ ۔ C.E.O ہیلتھ کادفتر جرائم پیشہ عناصر کی محفوظ ترین پناہ گاہ بن گیا ۔ عوامی وسماجی حلقوں نے چوہدری پرویز الٰہی وزیر اعلیٰ پنجاب سمیت دیگر اعلیٰ حکام سے فوری نوٹس لینے کا پرزور مطالبہ کیا ھے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں