26

جھنگ(ملک محمد عباس تجرا) شوگر کے عالمی دن کے موقع پر پی ایم اے کی جانب سے ڈی ایچ کیو ہسپتال جھنگ میں ایک سیمینار کا انعقاد کیا گیا جس کی صدارت ضلعی صدر پی ایم اے ڈاکٹر اعجاز سلطان نے کی

جھنگ(ملک محمد عباس تجرا) شوگر کے عالمی دن کے موقع پر پی ایم اے کی جانب سے ڈی ایچ کیو ہسپتال جھنگ میں ایک سیمینار کا انعقاد کیا گیا جس کی صدارت ضلعی صدر پی ایم اے ڈاکٹر اعجاز سلطان نے کی جبکہ فنانس سیکرٹری ڈاکٹرحنا چوہدری، ڈاکٹر سہراب خان سمیت ڈاکٹرز، پیرامیڈیکل اور سول سوسائٹی کے ممبران نے کثیرتعدادمیں شرکت کی اس موقع پر خطاب کرٹ ہوئے ڈاکٹر اعجاز سلطان کہا کہ ذیابیطس تیزی سے بڑھتا ہوا مسئلہ بن چکا ہے اور ایک اندازے کے مطابق دنیا بھر میں 42 کروڑ 22 لاکھ افراد اس کا شکار ہیں صرف پاکستان میں ہر سال ذیابیطس کے مرض کے باعث تقریباً ڈیڑھ سے دو لاکھ افراد معذور ہو جاتے ہیں ایک حالیہ تحقیق کے مطابق پاکستان میں ہر چار میں سے ایک فرد ذیابیطس کے مرض میں مبتلا ہے اور یہ تعداد تیزی سے بڑھ رہی ہے ان خطرات کے باوجود ذیابیطس کے شکار لوگوں کو اس بات کا علم نہیں کہ روز مرہ کے معمولات میں تبدیلی کرکے ہم اپنے معاملات میں بہتر لا سکتے ہیں انہوں نے مشورہ دیا کہ وہ شوگر کی بیماری سے بچاو کیلئے احتیاتی تدابیر اختیار کریں اور جو لوگ شوگر میں مبتلا ہیں وہ روزانہ متواتر واک کو اپنی زندگی کا حصہ بنا لیں اور دوا کے ساتھ احتیاط لازمی برتیں شوگر کے مریضوں کو چکنائی اور میٹھی چیزوں سے مکمل پرہیز کرنا چاہیے اور روزانہ صبح کے وقت واک کو معمول بنانا چاہیے پیدل چلنے سے بھی شوگر کنٹرول میں رہتی ہے ڈاکٹر اعجاز سلطان نے کہا کہ شوگر کا مرض ہمارے لائف سٹائل اور کھانے پینے کی عادات سے جڑا ہوتا ہے ہم اپنا لائف سٹائل بہتر کر کے شوگر کو بڑی حد تک کنٹرول کر سکتے ہیں ایک انسان کو سال میں کم از کم ایک بار شوگر ٹیسٹ کروانا چاہیے تاکہ اس موذی مرض سے بچا جا سکے ڈاکٹر حنا چوہدری کا کہنا تھا کہ یہ مرض عمر کے کسی حصے میں بھی لاحق ہو سکتا ہے اسے موروثی بیماری بھی کہا جاتا ہے ابھی تک شوگر کا مکمل علاج دریافت نہیں ہوا البتہ پرہیز اور ادویات سے اسے کافی حد تک کنٹرول کیا جا سکتا ہے شوگر لا تعداد بیماریوں کی بنیادی وجہ ہے اس وقت پاکستان میں تقریبا تین کروڑ افراد باقاعدہ طور پر ذیابیطس کے مریض ہیں جبکہ 5 سے 6 کروڑ افراد ذیابیطس کے نشانے پر ہیں اس کی سب سے بڑی وجہ کھانے پینے میں بد پرہیزی ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں