35

جھنگ(محمد جاوید اعوان)ڈپٹی کمشنرشاہد عباس جوئیہ نے کہا ہے کہ پنجا ب حکومت کی کسان دوست پالیسی کے تحت کسانوں اور کاشکاروں کا استحصال قابل قبول نہیں ہے۔

جھنگ(محمد جاوید اعوان)ڈپٹی کمشنرشاہد عباس جوئیہ نے کہا ہے کہ پنجا ب حکومت کی کسان دوست پالیسی کے تحت کسانوں اور کاشکاروں کا استحصال قابل قبول نہیں ہے۔کسی بھی کھاد ڈیلر کو مرضی کا ریٹ وصول کرنے کی ہرگز اجازت نہیں دی جائے گی۔ کھاد ڈیلرز اپنی دکانوں کے سامنے مقررہ ریٹس کی لسٹوں کو نمایاں جگہ پر آویزاں کریں ۔حکومت پنجاب کسانوں اور کاشتکاروں کو ہر ممکن ریلیف کے ساتھ ساتھ زراعت کے شعبہ میں بہتر پیدوار حاصل کرنے کےلئے ہمہ قسم کی سہولیات مہیا کر رہی ہے، ان خیالات کا اظہار انہوںنے ضلع بھر میںکھادوں کی ترسیل و فراہمی کے حوالہ سے خصوصی اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر ڈپٹی ڈائریکٹر زراعت توسیع چوہدری اختر حسین، زراعت آفیسر ، کسانوں کے نمائندگان اور کھاد ڈیلر بھی موجود تھے۔ اجلا س میں ضلع بھر میں کھاد کی طلب اور دستیابی کے حوالہ سے مسائل زیر بحث لائے گئے۔ ڈپٹی کمشنر نے کھادوں کی مصنوعی قلت کا سبب بننے والے ڈیلرز کیخلاف آپریشن کےلئے لائحہ عمل ترتیب دیتے ہوئے متعلقہ افسران کو پابند کیاکہ وہ روزانہ کی بنیاد پر ضلع میں کھاد مافیا کے خلاف فیصلہ کن کریک ڈاﺅن جاری رکھیں۔ڈپٹی کمشنر نے پرائس مجسٹریٹس کو نوٹیفائیڈ ریٹس پر کھاد کی فروخت یقینی بنانے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا ہے کہ کسانوں کے مفادات کا ہر صورت تحفظ یقینی بنایا جائے گا گندم کی کاشت کے وقت مصنوعی قلت ناقابل برداشت ہے، گندم کی کاشت کے لیے معیاری کھادوں کی فراہمی کو یقینی بنایا جائے۔ڈپٹی کمشنر نے مزید کہا کہ جعلی زرعی ادویات و کھادیں بنانے اور کاروبار کرنے والے افراد کا قلع قمع کرنے کے لئے مربوط مہم بھرپور انداز میں جاری رکھی جائیگی،کاشتکاروں کو معیاری زرعی ادویات اور کھادوں کی فراہمی کیلئے زرعی ٹاسک فورس ضلع بھر میں بلا تفریق کارروائیاں کریں اور کھاد ڈیلرز کے گوداموںکی چیکنگ کو یقینی بنائیںاور اس حوالہ سے کھادوں کی خریدوفروخت کا مکمل ریکارڈاورسٹاک کا ڈیٹا فراہم کیا جائے۔ڈپٹی کمشنر نے اسسٹنٹ کمشنرز کو ہدایات جاری کیں کہ وہ باقاعدہ اس کی نگرانی کریں اور کسانوں کی طرف سے مہنگی کھاد کی شکایات ملنے پر فوری ایکشن کریں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں