36

ڈی پی او حسن اسد علوی نے ضلع بھر میں بینکوں،مالیاتی اداروں کے سیکورٹی آڈٹ کے احکامات جاری کر دئیے**نیو ائیر نائٹ پر ون ویلنگ سمیت ہر قسم کی قانونی شکنی پر فوری قانونی ایکشن کی ہدایات جاری

*ڈی پی او حسن اسد علوی نے ضلع بھر میں بینکوں،مالیاتی اداروں کے سیکورٹی آڈٹ کے احکامات جاری کر دئیے**نیو ائیر نائٹ پر ون ویلنگ سمیت ہر قسم کی قانونی شکنی پر فوری قانونی ایکشن کی ہدایات جاری*
جھنگ (محمد جاوید اعوان )ڈی پی او حسن اسد علوی نے ضلع بھر میں بینکوں،مالیاتی اداروں کے سیکورٹی آڈٹ کے احکامات جاری کر دئیے،نیو ائیر نائٹ پر ون ویلنگ سمیت ہر قسم کی قانونی شکنی پر فوری قانونی ایکشن کی ہدایات جاری،اسلحہ کی نمائش،ہوائی فائرنگ کرنے والوں کو فوری گرفتار کیا جائے،ڈی پی او کی ہدایات جاری،تفصیلات کے مطابق ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر حسن اسد علوی نے وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کے ویژن اور آئی جی پنجاب راؤ سردار علی کے احکامات کی روشنی میں ضلع بھر کے پولیس فسران کو معاشرتی امن کے حوالے سے پروفیشنل ہدایات دیں،انہوں نے کہا کہ پولیس افسران سرکاری،نجی بینکوں اور مالیاتی اداروں کا سیکورٹی آڈٹ کریں،سرکلز کے ڈی ایس پیز اس بات کو یقینی بنائیں کہ ایس ایچ او روزانہ کی بنیاد پر اپنے تھانہ کی حدود میں واقع بینکوں اور مالیاتی اداروں کی سیکورٹی چیک کرے،سیکورٹی کے حوالے سے اسٹیٹ بینک اور محکمہ داخلہ کی طرف سے جو ایس او پیز جاری کئے گئے ہیں ان پر ہر حوالے سے گراس روٹ لیول تک عمل درآمد کو یقینی بنایا جائے،بینکوں اور مالیاتی اداروں میں سی سی ٹی وی کیمروں کے فنگشنل ہونے کو بھی یقینی بنایا جائے،ڈی پی او نے کہا کہ وہ ضلع بھرکے بینکوں اور مالیاتی اداروں کی سیکورٹی چیک کرنے کے لئے سرپرائیز وزٹ کریں گے،جہاں کہیں سیکورٹی انتظامات غیر اطمینان بخش ہوئے وہاں کے ذمہ دار پولیس افسران کے خلاف سخت محکمانہ کارروائی کی جائے گی،انہوں نے کہا کہ نیو ائیر نائٹ کے عنوان سے قانون شکنیوں کا سلسلہ شروع ہونے کے خدشات ہوتے ہیں،پولیس افسران اس بات کو یقینی بنائیں کہ نیو ائیر نائٹ کے موقع پر ون ویلنگ سمیت کسی قسم کی بھی قانون شکنی نہ ہو،ڈی پی او نے کہا کہ اسلحہ کسی بھی قانون شکنی کی ابتداء ہے،ریجن بھر میں اسلحہ کی نمائش اور کسی بھی حوالے سے ہوائی فائرنگ ناقابل برداشت ہے،جہاں کہیں اسلحہ کی نمائش ھویا ھوائی فائرنگ ھو تو پولیس ایسا کرنے والوں کو فوری گرفتار کر کے ان کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی کی جائے، معاشرتی امن اولین ترجیح ہے جس پر کسی قسم کا کوئی کمپرومائیز نہیں کیا جا سکتا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں