26

جھنگ۔(بیورو رپورٹ)لمپی سکن جیسی موذی وائرس نے تباہی مچا دی۔ مزید تفصیلات کے لیے لنک پر کلک کریں

جھنگ۔(بیورو رپورٹ)لمپی سکن جیسی موذی وائرس نے تباہی مچا دی۔ مزید تفصیلات کے لیے لنک پر کلک کریں تنخواہوں اورTA.DAکی مد میں لاکھوں روپے ماہانہ بٹورنے والےڈاکٹروں کے کنٹرول سے موذی مرض باہر۔لائیوسٹاک کے اعلیٰ افسران کی جانب سے ناقص اور گھٹیا ترین دوائیں تیار کرنے والی کمپنیوں کے ساتھ گٹھ جوڑ کر کے ناقص ترین دوائیوں کی خریداری کے لیے فرضی کاروائیوں کے لیے کاغذوں کی حدتک خانہ پری کرکے خزانہ سرکار کو کروڑوں روپے کا چونا لگانے تک محدود ھو چکے ہیں۔جس کے باعث ویٹرنری اینڈ اینیمل ہسپتالوں میں گھٹیا ترین ادویات دینے پر مریضوں کو کوئی رتی برابر بھی آرام نہیں ہوتا جس کے باعث شہری سرکاری ہسپتالوں کی بجائے پرائیویٹ میڈیکل سٹوروں سے مہنگی دوائیاں خریدنے پر مجبور ہو جاتے ہیں۔میڈیاسروےکےدوران متعدد شہریوں کے مطابق معلوم ہوا کہ جب ڈاکٹروں کے پاس مریض جانور کو لے کر جاتے ہیں تو ہسپتالوں میں زیادہ تر ڈاکٹر کہتے ہیں کہ ہمارے پاس دوائیاں ختم ھو گئی ہیں باہر کسی سٹور سے خرید لیں۔توکئی دفعہ ڈاکٹروں کا کہنا ہوتا ھے کہ دوائیاں بالکل نکمی کمپنی کی گھٹیا ترین ہیں جو کسی جانور کواثرنہیں کرتی ہیں سرکاری ہسپتال کی بجائے پرائیویٹ میڈیکل سٹورسے دوا خریدیں جس کا اثر بھی ہوگا۔محکمہ لائیو سٹاک کے افسران کی نااہلی اور غفلت کے باعث شہری لاکھوں روپے مالیت کے قیمتی جانوروں سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں۔جس کی عوامی وسماجی کاروباری حلقوں نے چوہدری پرویز الٰہی وزیر اعلیٰ پنجاب۔چیف سیکرٹری پنجاب سمیت دیگر اعلیٰ حکام سے فوری نوٹس لینے کا پرزور مطالبہ کیا ھے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں